54

حکومت کے وہ معاشی فیصلے جن کے  نتیجے میں مالیاتی استحکام پیدا ہوا بجٹ تقریر کے دوران دلچسپ انکشاف

[ad_1]

حکومت کے وہ معاشی فیصلے جن کے  نتیجے میں مالیاتی استحکام پیدا ہوا، بجٹ تقریر … اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) وفاقی وزیر برائے صنعت حماد اظہر نے بجٹ تقریر کے دوران سٹیٹ بینک سے ادھار نہ لینے ، ایکسچینج ریٹ کو مارکیٹ کے مطابق کرنے ، ضمنی گرانٹس جاری نہ کرنے سمیت دیگر فیصلوں کو وہ محرکات قرار دیا ہے جن سے مالیاتی استحکام پیدا ہوا۔ بجٹ تقریر کے دوران وفاقی وزیر حماد اظہر نے ” حکومت کے جن فیصلوں سے معاشی استحکام پیدا ہوا وہ کچھ یوں ہیں” کے نام سے پیرا گراف پڑھا۔ انہوں نے بتایا کہ حکومت نے سٹیٹ بینک سے ادھار لینے کا سلسلہ بند کردیا ۔سابقہ  حکومت کے غیر حقیقت پسندانہ فیصلے پر نظر ثانی کرکے ایکسچینج ریٹ کو مارکیٹ کے مطابق کیا گیا جس سے زر مبادلہ کی عدم دستیابی کا مسئلہ حل کرنے میں مدد ملی۔ انہوں نے بتایا کہ گزشتہ سال کوئی ضمنی گرانٹ نہیں دی گئی، قرضوں کے سٹرکچر کو بہتر کیا گیا جس سے 240 ارب روپے کی بجٹ ہوئی۔ سرکاری اداروں کی کارکردگی بہتر بنانے اور نقصانات میں کمی لانے کیلئے ادارہ جاتی اصلاحات کی گئیں۔ نومبر 2019 میں نیشنل ٹیرف پالیسی کی منظوری دی گئی جس کا مقصد روزگار میں اضافہ کرنا  ہے۔ حماد اظہر کے مطابق میک ان پاکستان کے نام سے پاکستانی مصنوعات کو عالمی منڈیوں میں متعارف کرایا گیا۔ کاروباری طبقے کو اس سال 254 ارب کے ری فنڈ جاری کیے گئے جو گزشتہ سال کے مقابلے میں 125 فیصد زیادہ ہے۔

مزید :

قومی -بجٹ -بزنس –

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں