64

پابندی کے باوجود گراﺅنڈ میں ٹریننگ کیلئے کیوں گئے تھے اور پی سی بی کے ایکشن کے بعد اب کیا کر رہے ہیں؟ شاہین شاہ آفریدی نے بالآخر انکشاف کر دیا

[ad_1]

پابندی کے باوجود گراﺅنڈ میں ٹریننگ کیلئے کیوں گئے تھے اور پی سی بی کے ایکشن … لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کرکٹ ٹیم کے مایہ ناز نوجوان فاسٹ باﺅلر شاہین شاہ آفریدی نے کہا ہے کہ عالمی وباءکورونا وائرس کے دور میں انہوں نے گراؤنڈ میں ساتھی کرکٹرز کے ساتھ ٹریننگ کر کے غلطی کی لیکن اب سب ایس او اوپیز پر مکمل عمل کر رہے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق شاہین شاہ آفریدی 8 ٹیسٹ، 19 ون ڈے میچز اور 12 ٹی 20میچز میں پاکستان کی نمائندگی کر چکے ہیں جبکہ تینوں فارمیٹ کا مستقل حصہ ہونے کی وجہ سے اب شاہین شاہ آفریدی کو سینٹرل کنٹریکٹ کی اے کیٹیگری میں شامل کیا گیا ہے۔ فاسٹ باﺅلر پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کی مقبول اور متحرک فرنچائز لاہور قلندرز کی جانب سے کھیلتے ہیں جنہوں نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کئی سوالات کے جواب دئیے۔ کورونا وائرس کی موذی وباءکے باعث لگنے والے لاک ڈاؤن کے دوران پاکستان کرکٹ ٹیم کے کچھ کھلاڑی گراؤنڈز میں جا کر ٹریننگ کرتے ہو ئے دیکھے گئے تھے جن میں شاہین آفریدی، فخر زمان ، عمران خان سینئر اور نسیم شاہ شامل تھے جس پر پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کو ایکشن لینا پڑا اور انہوں نے کرکٹرز کو احتیاطی ایس او پیز اور گائیڈ لائنز پر سختی سے عمل کرنے کیلئے کہا۔ شاہین شاہ آفریدی نے کہا کہ کافی عرصے سے کرکٹ نہیں ہو رہی تھی اور دو ماہ سے کرکٹ سے دور تھے جس کی وجہ سے ایسے لگ رہا تھا کہ کرکٹ چھوڑے ہوئے بہت عرصہ ہو گیا ہے، اس لئے کھیلنے کیلئے میدان میں چلے گئے جو کہ غلطی تھی اور بعد میں جو ہمیں پی سی بی نے چیزیں بتائیں ان پر سختی سے عمل کیا، اب ایک ساتھ ٹریننگ نہیں کر رہے اور ایس او پیز کو سختی سے فالو کر رہے ہیں۔ شاہین شاہ آفریدی نے کہا کہ انگلینڈ میں کنڈیشنز ہمیشہ مشکل رہی ہیں، اس مرتبہ بھی مشکل ہوں گی لیکن اب وقت سے پہلے جا رہے ہیں تو ہمیں ردھم میں آنے کا موقع ملے گا۔ باﺅلنگ سکواڈ مکمل نوجوان اور نا تجربہ کار نہیں ہے کیونکہ وہاب یاض ، محمد عباس ، سہیل خان اور عمران خان سینئر بھی سکواڈ میں شامل ہیں جبکہ ہمارے باﺅلنگ کوچ بھی تجربہ کار ہیں اس لئے امید ہے کہ ہمارا باﺅلنگ سکواڈ اچھا پرفارم کرے گا۔ شاہین شاہ آفریدی نے کہا کہ وہاب ریاض تجربہ کار اور سینئر باﺅلر ہیں اور ایک مرتبہ پھر ٹیم میں شامل ہوئے ہیں، ان کے آنے سے فائدہ ہوگا اور سیکھنے کا موقع ملے گا۔میں شروع سے ہی کرکٹ میں بہت محنت کر رہا ہوں لیکن اتنی جلد تینوں فارمیٹ کا حصہ بن جاؤں گا اس بارے میں نہیں سوچا تھا، مجھے یاد ہے ورلڈ کپ کے دوران انگلینڈ میں اپنے آخری میچ میں میری باﺅلنگ اچھی رہی تھی، اب بھی انگلینڈ جا رہا ہوں تو اب میرا ٹارگٹ یہ ہے کہ میں ٹیسٹ کرکٹ میں اچھا پرفارم کروں، ٹیسٹ کرکٹ میں اچھی پرفارمنس پر فوکس ہے ، جیسے وسیم اکرم اور وقار یونس نے ٹیسٹ میں ہی اپنی دھاک بٹھائی اور بہت وکٹیں حاصل کیں۔ شاہین شاہ آفریدی کا بھی جشن منانے کا انداز خاصی شہرت رکھتا ہے تاہم ان کا کہنا ہے کہ اب ہمیں کورونا کی وجہ سے بننے والے قوانین کو ہر صورت میں فالو کرنا ہے، پی ایس ایل کے دوران ہم نے کراؤڈ کے بغیر میچز کھیلے ہیں، اب کراؤڈ گھر بیٹھ کر کرکٹ انجوائے کرے میں لیکن میں اب بھی اسی انداز میں جشن مناﺅں گا۔

مزید :

کھیل –

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں