13

بزدار اور محمود خان تبدیل نہیں ہو رہے۔ اسد عمر کو واپسی کا بولوں گا: شیخ رشید

عمران خان 5 سال پورے کر ینگے ، صدارتی نظام کا امکان نہیں، شہباز شریف وکٹ کے دونوں جانب کھیل رہے


زش کے تحت سٹرکوں، پلوں پر پیسے لگائے گئے اور ریلوے کو نظرانداز کیا گیا، وزیر ریلوے کی پریس کانفرنس لاہور  وزیر ریلوے شیخ رشید نے واضح کیا ہے کہ پنجاب اور خیبر پختونخوا کے وزراء اعلی کو تبدیل نہیں کیا جارہا، سب کان کھول کر سن لیں کہ یہ وزیراعظم کا فیصلہ ہے،

اسد عمر نے پی ٹی آئی کے لیے قربانیاں دی ہیں ۔ بنی گالا میں وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت اجلاس ختم ہونے کے بعد میڈیا سے گفتگو کر تے ہوئے شیخ رشید نے کہا کہ وزیراعظم نے معیشت کے مسائل حل کر نے کیلئے اہم فیصلے کیے ہیں،

یہ خبر بھی پڑھے: ریسکیو 1122 کے محکمے میں آسامیاں خالی ہیں

چوروں اور ڈاکووں کی وجہ سے ملکی معیشت خراب ہوئی، میری کوشش ہو گی کہ میں چین جانے سے پہلے وزیر اعظم کے ساتھ یا بعد میں خود اسد عمر کے پاس جائیں اور ان سے کہوں کہ آپ کا بینہ کا حصہ ر ہیں۔ وفاقی وزیر نے یہ بھی واضح کیا کہ صرف ایک وزیر کو دوائیوں کی قیمتوں میں اضافے کی وجہ سے کابینہ سے نکالا گیا ہے، باقی کی وزیر کو نہیں نکالا گیا،

انہوں نے امید ظاہر کی کہ آج نہیں تو کل ، کل نہیں تو پرسوں اسد عمر کسی نہ کسی شعبے میں کسی نہ کسی طریقے سے واپس ضرور آئیں گے۔ لاہور سے اپنے نمائندے سے کے مطابق وزیر میوے شیخ رشید نے صدارتی نظام کے امکان کو یکسر مسترد کرتے ہوئے کہا کہ ملک کے پارلیمانی نظام کو چتار بنایا ہے اسد عمر نے خود استعفی دیا دو و ز یر بدلنے پر شور شرابا گیا،

بلاول باپ کی کر پشن کیلئے کھڑا ہو گا تو انستقبل ختم کر دے گا، شیخ رشید کہتے ہیں تھیں جون تک کرپٹ لوگوں کا صفایا ہو جائیگا یہ بات وزیر ریلوے نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی۔ ملکی معیشت کی کمزوری سے ٹوٹتے ہیں پہلے ہی کہہ دیا تھا کہ آئی ایم ایف کے بغیر گزارہ نہیں کرپشن کے باعث خزانہ خالی رہا، شیخ رشید کا مشیر پٹرولیم ند یم بابر کے متعلق کہنا تھا کہ عمران خان نیب زدہ خص کو برداشت نہیں کریں گے ،

خسرو بختیار اپنے متعلق خود جواب دیں۔ تمام ریلوے ملازمین جو تین سال سے ایک ہی جگہ پر تعینات ہیں ان کو ٹرانسفر کر دیا جائے گا۔ پاکستان ریلوے کیا پیک اور پاکستان میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سازش کے تحت سٹرکوں،

پلوں پر پیسے لگائے گئے اور ریلوے کو نظر انداز کیا گیا۔ انٹر نیشنل سازش تھی کہ ایم ایل ون میں رکاوٹ ڈالی جائے دورہ چین سے واپسی کے بعد ریلوے کے بارے میں بہت اچھی خبریں دوں گا ۔ چین میں ایم ایل ون پر وزیراعظم پاکستان عمران خان کی موجودگی میں 25 سے 28 اپریل کے در میان دستخط ہو جائیں گے جس سے ڈیڑھ لاکھ لوگوں کو روزگار ملے گا۔

ایم ایل ون کے بعد لاہور سے کراچی کا سفر 8 گھنٹے کا ہو گا۔ آج ٹرین کی سپیڈ 80 ، 70 اور 90 ہے ایم ایل ون کے بعد 160 کلو میٹر فی گھنٹہ ہوگی ۔ فرنس آئل کے ساتھ ساتھ فریٹ ٹرین کے لیے ہمیں اور بھی کام ملا ہے۔

جناح ایک پر لیس کے بعداب وزیراعظم سر سید احمد ایک پر لیں کا جلد افتتاح کریں گے۔ میرے دور میں ایک روپے کی بھی امپورٹ نہیں کی گئی ساری پرانی کوچز کوریلوے مزدوروں نے تیار کیا ہے۔ ہمارے پنر 20 فیصد بڑھ گئے ہیں جو کہ پاکستان ریلوے کی 70 سال تاریخ کاریکارڈ ہے۔

اب فریٹ میر اٹارگٹ ہے جس کے لیے ایک ہفتے کراچی میں بیٹھ کر وں گا۔ ایم ایل ون اور ٹو کیساتھ ہم ایم ایل تھری کو منہ سے تفتان کیلئے بھی کام کرنے جارہے ہیں۔ مال گاڑیوں میں کرپشن کے خاتمے کیلئے ٹریکر سسٹم لگانے کا فیصلہ کیا ہے جو اسے ناکام بنانے کی کوشش کرے گا اسے عبرت کا نشان بنادیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں