21

روسی فرم توانائی سیکٹر میں 2 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کرنے کو تیار

روسی فرم توانائی سیکٹر میں 2 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کرنے کو تیار انٹر انجینرنگ فوری بومی، نوسیری ، بلی، شمس،


russian firm investment in energy

مہمند ڈیم و دیگر میں تعاون کی خواہاں

کمپنی میں کی خواہش مند ، واپڈا سے مذاکرات ہو چکے ، کوئی جواب نہیں دیا گیا۔ ذرائع اسلام آباد ( ظفر بھٹہ روسی فرم نے پاکستان میں پانی و بجلی کے شعبہ میں دو ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔ پانی و بجلی کی وزارت کے ذرائع نے ایکسپریس ٹریبیون کو بتایا ہے کہ روس کی سرکاری فرم انٹر راؤ

بینرنگ پاکستان میں مہمند ڈیم سمیت کئی آلی منصوبوں میں سرمایہ کاری کرنا چاہتی ہے۔ راو انجینرنگ روس کی بڑی انرجی کمپنیوں میں سے ایک ہے۔ اس کمپنی کا یورپ کی سیمنز جیسی کمپنیوں کے ساتھ روس میں جو اینٹ دو چار ہے ۔ انٹر راو پاکستان اور روس کی حکومتوں کے در میان ڈیل کی خواہش مند ہے۔

جبکہ راو افغانستان میں بھی دریائے کابل پر ڈیم تعمیر کر رہی ہے ۔ ذرائع کے مطابق گزشتہ نومبر میں کمپنی اور واپڈا کے در میان مذاکرات ہو چکے ہیں۔
جبکہ کمپنی کے حکام وزیر توانائی سے ملاقات کے خواہاں تھے لیکن اب تک ملاقات نہیں ہو سکی ، وزارت توانائی کے اہلکاروں کی مطابق کمپنی کے حکام سرمایہ کاری کیلئے گہری د پیسی کا مظاہر ہ کیا لیکن ان کو ابھی تک کسی رد عمل نہیں دیا گیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ کمپنی حکام کی وفاقی وزیر عمر ایوب سے بھی ملا قات ہو چکی ہے،

یہ خبر بھی پڑھے: ٍٍ BR نے پاکستانیوں کے 50 ہزار آف شور بینک اکاؤنٹس کا سراغ لگا لیا

جس میں انہوں کے جامشورو پاور پلانٹ میں انوسٹ کرنے کی د پی کا اظہار کیا۔ وزارت کے حکام کے مطابق روسی کمپنی نے پاکستانی حکام کو تجویز دی ہے کہ اگر پاکستانی اتھارٹیز کسی بڑے پراجیکٹ کیلئے تیار نہیں تو کیانی فی الحال ابتدائی طور پر پانچ
چھوٹے منصوبوں میں سرمایہ کاری کیلئے بھی تیار ہے۔ جن میں بوبی، نوسیری، بیوی تنگس اور مہمند ڈیم شامل ہیں۔

روسی کمپنی کا کہنا ہے کہ وہ ان منصوبوں کیلئے ٹیکنیکل سپورٹ اور مالی تعاون کیلئے تیار ہے۔ ان منصوبوں کا کل تخمینہ 318 بلین روپے ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں