32

مجھ پر حملے 18 ترمیم کا جھگڑا ہے: زرداری

یہ آپ کا کام نہیں سیاست دان لڑ جھگڑ کر مسائل حل کر لیں گے ، مسئلہ مجھ سے اور اٹھا دوستوں کو ر ہے ہیں،


ٹریڈنگ اکاونٹس کو جعلیے کہا گیا، میری گرفتاری نئی بات نہیں ہوگی یہ جایا کرینگے یا جھریں گے ، آج آمریت سے بد تر دور ہے، حکومت گرانا مشکل نہیں، چاہتے ہیں وہ خود تھیں، نواز شریف اے پی سی میں آگئے تو وہاں ملاقات ہو گی : گفتگو سابق صدر آصف زرداری نے کہا ہے کہ 18 ویں ترمیم کے مخالفین مجھ پر حملے کر رہے ہیں، انہیں کہنا چاہتا ہوں کہ آپ کا کام نہیں ہم سیاست دان لڑ جھگڑ کر اپنے مسائل خود ہی عمل کر لیں گے۔

آنڈ کٹیٹر شپ سے بھی بد تر دور ہے یہ بر سے ایکٹر ز ہیں۔ یہ جو آن کر رہے ہیں كل بنتیں گئے ۔ پولیس آجائے تو یہ بنی گالہ سے نیچے نہیں اترتے۔ میری گرفتاری کو نئی نئی بات نہیں ہو گی، ماضی میں بھی ہوتی رہی ہے۔ یہ ایسا کریں گے ویاہی بھریں گے ۔

لاہور میں دو کا کنونشن سے خطاب کے بعد پرھیں کانفرنس میں سابق صدر نے کہا 18 ویں ترمیم چاروں صوبوں اور آزاد کشمیر کیلئے تقی پنجاب کو اس کا سب سے زیادہ فائدہ ہوا۔ ایشن کے دوران میں نے سوچا کہ ہر طرف سے مجھ پر حملہ ہورہا ہے پھر مجھے سمجھ آیا کہ یہ 18 ویں ترمیم کا جھگڑا ہے۔ سندھ میں تو کوشش کی گئی کہ حکومت چھین لی جائے مگر نہ چھین سکے۔

18 ویں ترمیم ختم کرنے کیلئے سب ڈرامہ کیا جارہا ہے۔ ترمیم ختم کرنے کیلئے ان کے پاس مینڈیٹ ہے نہ ہی سوچ۔ میں نے کبھی کسی سے این آر او نہیں مانگا، پہلے نواز شریف لاڈلا تھا اب عمران خان لاڈلا ہے ،وہ سمجھتا نہیں تھا یہ سنت نہیں ہے۔

لگاتا ہے یہ لاڈلا زیادہ دیر تک نہیں چلے گا کیونکہ اس کے پلے کچھ نہیں ، میں نے بھی لاڈلا نے کی کوشش نہیں کی۔ بلوچستان کے حقوق ہوں ، خیبر پختونخوا کی شناخت یا پنجاب کو زیادہ پیسے دینے کا معاملہ ہم نے ہر قدم ایک سوچ کے تحت اٹھایا، آج مجھ پر حملہ کرنے والے اسی سوچ کے مخالفین ہیں،

پرویز مشرف سے این آر او نہیں مانگاتو عمران خان سے کیوں مانگوں گا، ہم نے مقدے ویسے ہی جیتے ہیں ، مشرف دور میں جیل بھی کاٹی ہے، میرے کاروباری دوستوں کو میری وجہ سے تنگ کیا جارہا ہے۔ میری گرفتاری کوئی نئی خبر نہیں ہو گی۔ مجھے نہیں ، مشرف کو این آر او کی ضرورت تھی۔

نواز شریف اگر اے پی سی میں آگئے تو ان سے وہاں ملاقات ہوگی، مجھے نواز شریف اور نواز شریف کو میری ضرورت نہیں ، ہم دونوں کی اپنی جماعتیں ہیں ، پاکستان میں اسرائیلی طیارے کی آمد کے حوالے سے کچھ نہیں جانتا لیکن یہاں کوئی بات نا مکن بھی نہیں، سعودی عرب سے ملنے والے اقتصادی نیل آؤٹ سماج پر خوشی ہے چین بھی ہماری مدد کرے گا تاہم سعودی عرب سے ملنے والے پیکیج کی تفصیلات کو پارلیمنٹ میں لایا جائے۔

اگر عوام سے بوجھ کم ہو گا تو مجھے کوئی اعتراض نہیں ۔ پاکستان اور سعودی عرب نے ہمیشہ ایک دوسرے کی مدد کی ہے۔ لوگوں کو مسئلہ مجھ سے ہے مگر اٹھا میرے دوستوں کورہے ہیں۔ اس گروپ پر ہاتھ ڈالا گیا ہے جس نے سندھ میں صنعتوں کے فروغ میں مدد دی ہے، ان پر قیامت گزر رہی ہے۔

ایک دوست کو صرف اس لیے فون کیا کہ معلوم کریں کہ فصل کی ہوئی ہے ۔ میرے فون پر اس کو بھی اٹھا لیا گیا۔ یہ ہمیشہ میرے دوستوں کو پڑتے ہیں۔ ٹریڈنگ اکاؤ نٹس کو جعلی اکاؤنٹس کہا گیا۔ ہر طرف سے مجھ پر حملے کیوں گئے جارہے ہیں؟ کوشش کریں گے سارے پاکستان کو ان شکنجوں سے بچا سکیں۔

دور آمریت کے اقدامات کی اداکاری کرنے والے بہت برے اداکار ہیں ۔ مولانا فضل الرحمان کی کل جماعتی کانفرنس میں جانے کی حامی بھری ہے۔ دیکھتے ہیں مولانا1 3 اکتوبر کو اے پی سی کراتے ہیں یا نہیں؟ حکومت گراکر مسئلہ اپنے گلے میں ڈالنے میں د پچپی نہیں ۔

چاہتے ہیں کہ یہ حکومت کر کر کے تھیں۔ عمران خان کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ تمہارے پاس مینڈیٹ ہے نہ تمہاری سوچ ہے اور نہ تمہیں سکھایا گیا ہے ، سوچنا پڑتا ہے ، ان کی چالاکیوں کو سامنے لانا پڑتا ہے۔“ ہم نے قانون کی عزت کروانی ہے ، ہم عدلیہ کے خلاف نہیں ۔

ہم نہیں چاہتے ہیں کہ حکومت گرا کر ان کی ناکامیاں اپنے گلے ڈال لیں ۔ ہم چاہتے ہیں کہ یہ حکومت اپنی مدت پوری کرے۔ حکومت گرانا مشکل نہیں لیکن ہم چاہتے ہیں کہ حکومت خود تھے۔ ریاست کو خطرہ باہر سے نہیں اندر سے ہے۔

ایک اور صحافی نے سوال کیا کہ سنا ہے آپ ڈیل کر کے دبئی جار ہے ہیں۔ جس پر آصف زرداری نے بر جستہ کہا چوژو د بی بھی کوئی جگہ ہے، جانا ہے تو کسی اچھی جگہ کا بتاتے۔

قبل ازیں لاہور میں پیپلز لائرز فورم کا کنونشن ہوا جس میں سابق صدر نے بھی شرکت کی۔ کنونشن میں گیارہ نکاتی قرار داد منظور کی گئی جس میں کہا گیا ہے کہ کبھٹوازم پر عمل کر کے ہی خلق خدا کے حقوق کا حقیقی معنوں میں تحفظ کیا جاسکتا ہے ۔

علاوہ ازیں ایک پیغام میں آصف زرداری نے کہا بھارت سے آزادی کشمیریوں کا حق ہے، یقین ہے کہ ایک دن کشمیر بھارت کے قبضے سے آزاد ہو گا، نائی منصف، مظلوم کشمیر یوں کو انصاف دلوانے میں مدد کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں