36

الیکشن تک کسی سیاستدان کو گرفتار نھیں کرے گے: نیب

خواجہ آصف، رانا فضل، رانا مشہود ، رائے منصب کیخلاف انکوائریاں مؤخر، مزید تحقیقات انتخابات کے بعد ہوگی۔


ایگزیکٹو بورڈ کا فیصلہ ، ہمارا سیاست سے کوئی تعلق نہیں ، جاوید اقبال بلین ٹری پراجیکٹ ، سندھ سوشل ریلیف فنڈز کے افسروں کیخلاف انکوائریز ، احد چیمہ ، شاہد شفیق، عالم فریدی،
کا سا ڈوی لیپر ز ، سابق آئی جی سندھ جمالی کیخلاف ریفرنسز کی منظوری اسلام آباد (خصوصی خبر نگار ، مانیٹرنگ ڈیک ) نیب کے ایگزیکٹو بورڈ نے سابق وزیر خارجہ خواجہ آصف،
 
سابق وزیر مملکت رانا افضل ، سابق صوبائی وزیر رانا مشہود ، سابق ایم این اے رائے منصب کے خلاف مقدمات کو الیکشن تک موخر کرتے ہوئے انتخابی عمل میں شامل کسی سیاستدان کو 25 جولائی 2018ء تک گرفتار نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے ، مذکورہ مقدمات کی مزید تحقیقات انتخابات کے بعد ہوگی ۔ نیب اعلامیہ کے مطابق قومی احتساب بیورو کے ایگزیکٹو بورڈ کا اجلاس قومی احتساب بیورو کے چیئر مین جسٹس (ر) جاوید اقبال کی زیر صدارت نیب ہیڈ کوارٹرز اسلام آباد میں منعقد ہوا جس میں اہم فیصلے کئے گئے
 
۔ نیب نے واضح کیا ہے کہ تمام شکایات کی جانچ پرتال ، انکوائریاں اور انویسٹی گیشن مبینہ الزامات کی بنیاد پر شروع کی گئی ہیں جو کہ حتمی نہیں۔ نیب تمام متعلقہ افراد
سے بھی قانون کے مطابق ان کا موقف معلوم کر دیا تا کہ انصاف کے تمام تقاضے پورے کئے جائیں۔ اجلاس میں کئے گئے فیصلوں کی مطابق نیب کی ایگزیکٹو بورڈ نے احد چیمہ سابق ڈی جی پنجاب لینڈ ڈویلپمنٹ کمپنی ، شاہد شفیق، عالم فریدی چیف ایگزیکٹو آفیسر بسم اللہ انجینئرنگ، میسرز لاہور کا سا ڈویلیپرز کے مالکان اور انتظامیہ ، لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے افسران و اہلکار ان اور دیگر کے خلاف بد عنوانی کار بیفرنس دائر کرنے کی منظوری دی
 
۔ ملزمان پر مبینہ طور پر بد عنوانی اور اختیارات کے ناجائز استعمال کا الزام ہے۔ جس سے قومی خزانے کو تقریبا 660 ملین روپے کا نقصان پہنچا۔ ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے پنجاب سپورٹس بورڈاور یوتھ فیسٹیول کی انتظامیہ اور دیگر کیخلاف انکوائری کی منظوری دی۔ ملزمان پر مبینہ طو پر بد عنوانی اور اختیارات کے ناجائز استعمال کا الزام ہے۔ جس سے قومی خزانے کو 1739 ملین روپے کا نقصان پہنچا۔ ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے سابق آئی جی سندھ غلام حیدر جمالی اور دیگر
کے خلاف بد عنوانی کا ریفرنس دائر کرنے کی منظوری دی۔
 
ملزمان پر مبینہ طور پر بد عنوانی اور اختیارات کے ناجائز استعمال کا الزام ہے۔ جس سے قومی خزانے کو 16 کروڑ 25 لاکھ روپے کا نقصان پہنچا۔ ایگزیکٹو بورڈ نے سٹیٹ بینک سٹاف کو آپریٹو ہاؤسنگ سوسائٹی کی انتظامیہ ، محکمہ مال کراچی کے افسران / ابکاران اور دیگر کیخلاف انویسٹی گیشن کی منظوری دی ۔
 
ملزمان پر مبینہ طور پر غیر قانونی طور پر سرکاری زمین پر سٹیٹ بینک سٹاف کو آپریٹو ہاؤسنگ سوسائٹی قائم کرنے کا الزام ہے۔ جس سے قومی خزانے کو بھاری نقصان پہنچا۔ ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے سندھ سوشل ریلیف فنڈ کے افسران / اہلکار ان کے خلاف انکوائری کی منظوری دی۔ ملزمان پر مبینہ طور پر فنڈز میں خورد برد کرنے کا الزام ہے۔ جس سے قومی خزانے کو 13
. 402 ارب روپے کا نقصان پہنچا۔
 
ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے پروگرام مینیجر ایچ آئی سی / ایڈز کنٹرول پروگرام محکمہ صحت حکومت سندھ ڈاکٹر محمد یونس چاچڑ اور دیگر کے خلاف انکوائری کی منظوری دی۔ ملزمان پر مبینہ طور پر اختیارات کے ناجائز استعمال اور سرکاری اخراجات میں خوردبرد کا الزام ہے۔ جس سے قومی خزانے کو 35
. 236 ملین روپے کا نقصان پہنچا۔
 
ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے سیکرٹری ہیلتھ حکومت سندھ اور دیگر کے خلاف انکوائری کی منظوری دی ۔ ملزمان پر مبینہ طور پر اختیارات کے ناجائز استعمال ، ہیلتھ ڈیپارٹمنٹ اور ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کے ٹھیکوں میں خوردبرد کا الزام ہے، جس سے قومی خزانے کو 976 ملین روپے کا نقصان پہنچا۔ ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے سردار بیگم ڈینٹل کالج پشاور کی انتظامیہ اور دیگر کے خلاف عدم ثبوت کی بنیاد پر انکوائری بند کرنے کی منظوری دی
 
۔ ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے الراضی میڈ یکل کاج کے خلاف انکوائری کر نے کی منظوری دی ۔ ملزمان پر مبینہ طور پر اختیارات کے ناجائز استعمال اور طلبہ و طالبات کو داخلوں کے نام پر دھوکہ دینے کا الزام ہے ۔ ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے سابق چیف ایگز یک و فاٹا ڈویلپمنٹ اتھارٹی اور دیگر کے خلاف کیس چیف سیکر ٹری خیبر پختونخوا کو بھجوانے کی منظوری دی تاکہ وہ قانون
کے مطابق مبینہ طور پر 414 غیر قانونی بھرتیوں کے معاملہ کی مزید جانچ پڑتال کریں۔
 
ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے محکمہ صحت خیبر پختونخواہ کے افسران اہلکار ان اور دیگر کے خلاف انکوائری کی منظوری دی ۔ ملزمان پر مبینہ طور
پر مبینہ طور پر بد عنوانی اور اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے غیر قانونی طور پر من پسند لوگوں کو ٹھیکے دینے کا الزام ہے۔ جس سے قومی خزانے کو 90ملین روپے کا نقصان پہنچا۔ نیب کے ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے بلین ٹری سونامی پراجیکٹ خیبر پختونخوہ کے افسران را به کار ان کے خلاف انکوائری کی منظوری دی
 
۔ ملزمان پر مبینہ طور پر پراجیکٹ کے فنڈز میں خورد برد کرنے کا الزام ہے۔ جس سے قومی خزانے کو مبینہ طور پر 19 ارب روپے کا نقصان پہنچا۔ ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے سابق ڈی جی کوئٹہ ڈویلپمنٹ نور احمد پر کافی کے خلاف بد عنوانی کار بیفرنس دائر کرنے کی منظوری دی۔ ملزم نے اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے مبینہ طور پر چلتن ایک سٹن ہاؤ سنگ سلیم ائیر پورٹ روڈ کو منہ میں مبینہ طور پر غیر قانونی طور پر پلاٹ الاٹ کرنے کا الزام ہے۔ جس سے قومی خزانے کو تقریبا 7 . 4 ملین روپے کا نقصان پہنچا۔
 
ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے سابق ڈی جی کوئٹہ ڈویلپمنٹ نور احمد پر کافی کے خلاف بد عنوانی کار بیفرنس دائر کرنے کی منظوری دی ۔ ملزم نے اختیارات کا ناجائز استعمال کر تے ہوئے مبینہ طور پر زرغون ہاؤسنگ سکیم کو مٹہ اور کرانی ہاؤسنگ سکیم کو منہ میں من پسند افراد کو قواعد کے خلاف پلاٹ الاٹ کر نے کا الزام ہے۔ جس سے قومی خزانے کو تقریبا 3 کروڑ 27 لاکھ روپے کا نقصان پہنچا۔
 
ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے سابق مینیجنگ ڈائر یکٹر واٹر اینڈ سنیٹیشن ایجنسی کو بیلہ حامد لطیف رانا اور دیگر کیخلاف ضمنی ریفرنس دائر کر نے کی منظوری دی ۔ ملزمان پر مبینہ طور پر آمدن سے زائد اثاثے بنانے کا الزام ہے۔ جس سے قومی خزانے کو 354
.
3 ملین روپے کا نقصان پہنچا۔ ایگزیکٹو بور ڈاجلاس نے ریفرنس نمبر 5
/
2008 اسٹیٹ اور مسز حفیظ الرحمان کی 34 . 375 ملین روپے کی پلی بار گین کی درخواست منظور کر لی۔
 
ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے سابق آئی جی پنجاب کی
طرف سے نیب کو وہاڑی پولیس کے سرکاری فنڈز میں خوردبرد اور اختیارات کے ناجائز استعمال کے کیس میں ملوث پولیس افسران اور دیگر کے خلاف بد عنوانی کا ریفرنس دائر کرنے کی منظوری دی۔ ملزمان نے مبینہ طور پر قومی خزانے کو کروڑوں روپے نقصان پہنچایا۔ نیب کے ایگزیکٹو بورڈ اجلاس میں سابق وزیر خارجہ خواجہ آصف ، سابق وزیر مملکت رانا فضل ، سابق صوبائی وزیر رانا مشہود ، سابق ایم این اے رائے منصب کے مقدمات کا بغور جائزہ لیا گیا اور انکے خلاف مقدمات کو الیشن تک موخر کیا گیا تا کہ مذکور افراد ایشن میں بھر پور حصہ لے سکیں۔
 
مذکور و مقدمات کی نذدید تحقیقات انیمیشن کے بعد ہوں گی اور الیکشن میں حصہ لینے والے کسی سیاستدان کو 25 جولائی 2018ء تک گرفتار نہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ نیب مزید واضح کرنا چاہتا ہے کہ اس کا سیاست یا ایشن سے کوئی تعلق ہیں اور اسی بنیاد پر مذکورہ مقدمات کو 25 جولائی 2018ء تک موخر کیا گیا ہے۔ اعلامیہ کے مطابق چیئرمین نیب
نے کہا کہ نیب افسران ملک سے بد عنوانی کے خاتمہ کو اپنی قومی ذمہ داری سمجھتے ہیں جس کیلئے وہ بلا تفریق بد عنوان عناسر کے خلاف اپنی بہترین صلاحیتوں کا استعمال کرتے ہوئے کر پشن فری پاکستان کے لیے بھر پور کاوشیں کر رہے ہیں ۔
 
انہوں نے کہا کہ تمام شکایات کی جانچ پڑتال، انکوائریاں اور انوسٹی گیشنز کو قانون، میرٹ، شفافیت اور ٹھوس شوائد کی بنیاد پر منطقی انجام تک پہنچائی جائیں۔ نیب کسی سے انتقامی کارروائی پر یقین نہیں رکھتا بلکہ نیب” احتساب سب کے لیے کی پالیسی پر سختی سے عمل پیرا ہے۔ نیب کی پہلی اور آخری وابستگی پاکستان اور پاکستان کی عوام سے ہے ۔ نیب افسران اپنے فرائض پوری ایمانداری ، دیانت، میرٹ، شفافیت اور قانون کے دائرے میں رہتے ہوئے سرانجام دیں اس سلسلہ میں کوئی کوتاہی برداشت نہیں کی جائیگی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں