کورونا: امریکا نے بھی برطانیہ سے آنیوالوں کیلیے شرائط رکھ دیں

امریکا نے بھی برطانیہ سے آنے والے مسافروں کے لیے شرائط عائد کردیں۔

غیر ملکی میڈیا کےمطابق امریکا نے برطانیہ سے پروازوں کے ذریعے آنے والے مسافروں کے لیے کورونا کا منفی ٹیسٹ لازمی قرار دے دیا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق امریکی سینٹر فار ڈیزیز کنٹرول نے شرط عائد کی ہےکہ برطانیہ سے امریکا آنے والے مسافروں کو روانگی سے 72 گھنٹے قبل اپنا کورونا کا ٹیسٹ کرانا ہوگا اور منفی رپورٹ دکھانے کی صورت میں ہی ان مسافروں کو امریکا میں داخلے کی اجازت دی جائے گی۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق امریکی سی ڈی سی کی جانب سے یہ فیصلہ برطانیہ میں کورونا کی تیزی سے پھیلنے والی نئی قسم سامنے آنے کے بعد کیا گیا ہے۔

امریکی سی ڈی سی کی جانب سے برطانیہ سے آنے والوں کے لیے منفی ٹیسٹ کی شرط ایسے وقت میں عائد کی گئی جب گزشتہ روز ٹرمپ انتظامیہ نے کہا تھا کہ برطانیہ سے آنے والوں کے لیے ٹیسٹ کی شرط رکھنے کی کوئی منصوبہ بندی نہیں کی جارہی ہے۔

امریکی سی ڈی سی کا کہنا ہےکہ برطانیہ سے آنے والے مسافر لازمی طور پر پی سی آر یا اینٹی جن ٹیسٹ کے ذریعے اپنی منفی رپورٹ دکھائیں۔

سی ڈی سی کے مطابق برطانیہ میں سامنے آنے والا نیا وائرس میوٹیشن کے ذریعے تبدیل ہوتا ہے اور ابتدائی تجزیے میں یہ بات سامنے آئی ہےکہ وائرس پہلے کے مقابلے میں 70 فیصد زیادہ تیزی سے پھیل سکتا ہے۔

سینٹر فار ڈیزیز کنٹرول کا کہنا ہےکہ اگر کوئی مسافر امریکا آنے کےلیے ٹیسٹ کا انتخاب نہیں کرتا تو اسے بورڈنگ کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

برطانیہ میں کورونا کی نئی قسم سامنے آنے کے بعد دنیا کے بیشتر ممالک نے سفری پابندیاں عائد کردی ہیں اور اپنی سرحدوں کو بھی ٹریفک کے لیے بند کردیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق واشنگٹن میں برطانوی سفارتخانے نے اس معاملے پر فوری طور پر کوئی رد عمل جاری نہیں کیا۔

About The Author

Related posts

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *