bomb-last-in-abaad 130

مسجد رحمانیہ میں بم دھماکے کے نتیجے میں پیش امام سمیت 4 افراد شہید اور 28 زخمی

آباد کی مسجد رحمانی کو نماز جمعہ سے قبل نشانہ بنایا گیا، نجی ہسپتال منتقل ، فورسز کا علاقے میں سرچ آپریشن اڑھائی کلو دھماکہ خیز مواد استعمال کیا گیا،


bomb-last-in-abaad

ایسے حملے ملکی ترقی کیخلاف گھناؤنی سازش ، قوم متحد ہے ، صدر، وزیر اعظم و دیگر کی مذمت کو منہ ،، کوئٹہ کے علاقے پشتون آباد کی مسجد رحمانیہ میں بم دھماکے کے نتیجے میں پیش امام سمیت 4 افراد شہید اور 28 زخمی ہوگئے جن میں سے 6 کی حالت تشویشناک بتائی گئی ہے ،

دھما کہ نماز جمعہ سے قبل اس وقت ہوا جب لوگ نماز کی تیاری کر رہے تھے ، مسجد کے دروازے کھڑکیاں اور شیشے ٹوٹ گئے ، قریبی عمارتوں کو بھی نقصان پہنچا، پولیس کے مطابق منبر کے پاس ہونے والے ڈیوائس دھماکے سے پیش امام عطاء الرحمن، شاہ زیب موقع پر شہد، سلطا تسول ہسپتال میں جبکہ ایک اور زنی بی ایم سی ہسپتال میں چل بسا۔

، ڈی آئی جی کوئٹہ کے مطابق 2 سے اڑھائی کلو گرام دھماکہ خیز مواد استعمال کیا گیا، دھماکے کے بعد ایف کی اور پولیس کی بھاری نفری نے علاقے کو گھیرے میں لیکر سرچ آپریشن شروع کر دیا ، گور نر ، وزیراعلی بلوچستان ، وزیر داخلہ اور وزیر صحت کی جانب سے بم دھماکے کی شدید الفاظ میں مذمت کی گئی وزیر اعلی نے پولیس حکام سے دھماکے کی رپورٹ طلب کر لی ،

یہ خبر بھی پڑھے: بلدیاتی نظام کے بعد سندھ میں کسی تقسیم کی ضرورت نہیں:وزیراعظم

صوبائی وزیر صحت میر نصیب اللہ مری اور اصغر خان نے سول ہسپتال میں زخمیوں کی عیادت کی اور انہیں بہتر علاج و معالجے کی سہولت فراہم کر نے کی ہدایت کی ، دوسری جانب صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کوئٹہ میں دہشت گرد حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے قیمتی جانوں کے ضیاع پر گہرے دکھ اور غم کا اظہار اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کیلئے دعا کی ،

اپنے بیاں انہوں نے کہا کہ ایسے حملے پاکستان کی ترقی کے خلاف گھناؤنی سازش ہیں، پوری قوم دہشت گردی کے خلاف جنگ میں متحد ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے دھماکہ کی شدید مذمت کرتے ہوئے واقعہ کی رپورٹ طلب کر لی ہے۔

وزیراعظم آفس کی طرف سے جاری بیان کے مطابق وزیراعظم نے متعلقہ حکام کو زخمیوں کو بہترین طبی امداد کی فراہمی کی ہدایت کی ۔ انہوں نے زخمیوں کی جلد صحت یابی کیلئے دعا بھی کی،

وزیر داخلہ اعجاز احمد شاہ اور وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے دہشت گردی کے اس بزدلانہ واقعہ کی مذمت کی اور کہا کہ عدم استحکام پیدا کر نے والوں کا مقابلہ پوری طاقت سے کیا جائے گا ،

لاہور سے اپنے سٹاف رپورٹر ، پولیٹیکل رپورٹر اور نمانند وایہ پر لیس کے مطابق پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر و قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے کو منہ دھماکے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ دہشتگردی کے واقعات میں مسلسل اضافہ انتہائی تشویشناک ہے۔، حکومت معاملے کو سنجیدہ لیتے ہوئے فی الفور پارلیمان کو اعتماد میں لے،

،سراج است، لیاقت بلوچ اور دیگر رہنماؤں نے بھی اظہار مذمت اور متاثرہ خاندانوں سے گہری ہمدردی کا اظہار کیا۔

اس پوسٹ پر کمینٹ کریں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں